What is Fluconazole? ( In Urdu ) فلوکونازول کیا ہے اور یہ کیسے کام کرتی ہے؟


Pakistan / پاکستان میں فلوکونازول (Fluconazole) کے مندرجہ ذیل برانڈ دستیاب ہیں۔

ALFUMET, ARSOZOLE, AXICON, BECONAZOLE, CANDIA, CANDICAN, CANDIRID, CANZOLE, CARATIN, COHEIM, CONA, CONSAL, COZIL, DECONAZOL, DEROCON, DEYEAST, DIFLOZE, DIFLUCAN, DIFLUCAN 150, DOTEX, F-ZOLE, FASICAL, FAVRIZOL, FCOZOLE, FLOC, FLOCOSH, FLU-Z, FLUCAL, FLUCANOL, FLUCO-Z, FLUCOADVAN, FLUCOAIM, FLUCON, FLUCOROWN, FLUCOSAF, FLUCOVAL, FLUCOZOLE, FLUDERM, FLUGINAL, FLUIN, FLUKA, FLUNAZ, FLUZIC, FLUZOLE, FUGIX, FUNFIL, FUNGANIL, FUNGAS, FUNGICURE, FUNGIFIGHT, FUNGIMED, FUNGIX, FUNGONE, FUNGVEL, FUNZIL, FYCOZOLE, FLUCONAZOLE DOSE, GENIEL, GRAFAZOLE, H-ZOLE, HIFLUCAN, LARGON, LEUCON, LUMEN, MYCOLE, NAZOLE, NIDACON, NO-FUNG, NOTOCAN, NT.FUNGAL, OMASTIN, ONAMED, ONLEZOL, PULCON, RANZO, REXOLE, ROTAZOL, RYZOL, SAYFLUC, SKIF, TECHNOZOLE, TRAC, TRIAZOLIN, TRICAN, UCONAZOL, V-CON, VZOLE, ZOLANIX.

فلوکونازول کا تعلق ادویات کے گروپ imidazoles سے ہے اور یہ مصنوعی طور پر تیار کی جانے والی ادویات میں شامل ہے۔ یہ دوا انسانی جسم پر اگنے والی پھپوندی (Fungus) کے خاتمے کیلیےٴ استعمال کروائ جاتی ہے ۔ پھپوندی کے خلیے میں موجود Ergosterol پھپوندی کے زندہ رہنے کیلیےٴ ضروری ہوتا ہے ۔ فلوکونازول اسی Ergosterol کے بننے کے عمل کو روک دیتی ہے جس سے پھپوندی کا خاتمہ ممکن ہو جاتا ہے۔ فلوکونازول کی آمد سے پہلے استعمال ہونے والی اینٹی فنگل ادویات نسبتاً زہریلی تھیں مگر ۱۹۸۸ میں فلوکونازول کے آنے سے یہ مشکل کافی حد تک حل ہو گئ ۔

جسم میں داخل ہونے کے بعد تقریباً 45 فیصد فلوکونازول (Fluconazole) جسم میں جذب ہوتی ہے اور تقریباً 80 فیصد دوا گردوں کے ذریعے جسم سے خارج ہوتی ہے ۔ جسم میں تقریباً 25 سے 30 گھنٹے کے بعد فلوکونازول کی مقدار آدھی رہ جاتی ہے ۔

مندرجہ ذیل ادویات کے ساتھ فلوکونازول کا اِستعمال مَنع (Contraindicated) ہے :

cisapride

astemizole

pimozide

quinidine

erythromycin

ٹی بی کی دوا (Rifampicin) کے ساتھ فلوکونازول (Fluconazole) کا استعمال:

ٹی بی کے علاج میں استعمال ہونے والی دوا (Rifampicin) کے ساتھ فلوکونازول کو استعمال کرنے کی صورت میں فلوکونازول کی خوراک کو بڑھانے کی ضرورت ہوتی ہے۔

سائڈ افیکٹ (Side Effects)

فلوکونازول کے اِستعمال سے مندرجہ ذیل سائیڈ افیکٹ سامنے آ سکتے ہیں

۔ الٹی ہونا

۔ پیچش

۔ جلد پر ریش (Rash) نکلنا

۔ جگر کے انزائم متاثر ہونا

۔ ECG پر QT-interval کا بڑھ جانا

۔ دورے پڑنا

درج ذیل کیفیات میں فلوکونازول (Fluconazole)کا استعمال احتیاط سے کرنا چاہیئے:

۔ گُردوں کی بیماری کی صورت میں

۔ دورانِ حمل

۔ دودھ پلانے والی ماوٴں میں

۔ ایک سال سے کم عمر بچوں میں

۔ جگر کے امراض میں

دورانِ حمل فلوکونازول کے استعمال سے اسقاطِ حمل کے امکانات بڑھ سکتے ہیں اور زیادہ مقدار میں یہ دوا لینے سے پیدا ہونے والے بچے میں پیدائشی نقائص ظاہر ہو سکتے ہیں ۔ فلوکونازول چونکہ ماں کے دودھ میں خارج ہوتی ہے، اس لیئے دودھ پلانے والی ماؤں میں اس کا استعمال مناسب خیال نہیں کیا جاتا۔

ابھی شیئر کریں اور دوسروں کی آگاہی میں اپنا کردار ادا کریں۔


Skype

Clicking Subscribe button will subscribe you to our marketing campaigns as well.