Alopecia areata in Urdu, Balchar ka ilaj, بالچر، بال خورہ کا علاج


Alopecia areata in Urdu, Balchar ka ilaj

بالچر کو طِبی زبان میں Alopecia areata کا نام دیا جاتا ہے۔ یہ ایک عام بیماری ہے جو طویل عرصے تک چلتی ہے اور اِس میں جِسم کے مُختلف حصوں پر موجود بال جھڑنے لگتے ہیں۔ بالچر (Balchar) کی شِدت مختلف لوگوں میں مُختلف ہوتی ہے۔ کچھ لوگوں میں جِلد پر موجود بالوں کی ایک محدود مقدار گِرتی ہے اور کچھ وقت کے بعد خودبخود ٹھیک ہو جاتی ہے۔ مگر کُچھ لوگوں میں بالوں کا بالکل صفایا ہو جاتا ہے اور ایسے لوگوں میں بالوں کے واپس آنے کی امید بھی کم ہوتی ہے۔ بالوں کے ساتھ ساتھ ناخن بھی متاثر ہو سکتے ہیں۔

بالچر (Alopecia areata) ہر رنگ اور نسل کے لوگوں میں پایا جاتا ہےاور یہ عمر کے کسی بھی حصے میں شروع ہو سکتا ہے، لیکن زیادہ تر لوگوں میں اِس کا حملہ 40 سال کی عمر سے پہلے ہوتا ہے۔ 15 سے 29 سال کی عمر کے درمیان بالچر ہونے کے اِمکانات زیادہ ہوتے ہیں۔ بالچر مردوں اور خواتین میں ایک ہی تناسب سے پایا جاتا ہے۔ بالچر (Balchar) متعدی بیماری نہیں ہے اور نہ ہی یہ کِسی وِٹامِن کی کمی یا خوراک کی کمی سے ہوتی ہے۔

بالچر سے متاثرہ افراد کے قریبی رشتے داروں میں ذیابیطس کا مرض عام لوگوں کی نِسبت زیادہ دیکھا گیا ہے۔ اسکے علاوہ Atopic diseases (جِس سے مراد ایسے امراض ہیں جِن میں مریضوں کو کچھ خاص اشیاء سے اِنتہائ حساسیت/الرجی ہو جاتی ہے)، بھی بالچر کے مریضوں میں عام لوگوں کی نِسبت زیادہ پائ جاتی ہیں۔

وجوہات

بالوں کی نشونما ایک سائیکل (Cycle) میں ہوتی ہے۔ نشونما کا پہلا مرحلہ Anagen phase کہلاتا ہے جِس میں بالوں کی جڑھ میں موجود خلیئے تیزی سے بال بناتے ہیں اور بال لمبا ہوتا جاتا ہے۔ نشونما کا دوسرا مرحلہ Catagen phase کہلاتا ہے اور اسکے دوران بال بڑھنا رُک جاتا ہے۔ تیسرا اور آخری مرحلہ Telogen phase کہلاتا ہے جِس کے دوران بال گرنے لگتے ہیں۔ ایک ہی وقت میں مُختلف بال مُختلف مراحل سے گزر رہے ہوتے ہیں۔ بالچر (Balchar) ہونے کی صورت میں یہ توازن بِگڑ جاتا ہے اور جِلد کی متاثرہ جگہ پر ایک ہی وقت میں زیادہ تر بال Telogen phase میں دھکیل دیئے جاتے ہیں۔ اِسلیئے وھاں سے بال گِرنے لگتے ہیں۔

جلد کا وہ حصہ جہاں سے بال اُگتا ہے Hair follicle کہلاتا ہے۔ حالیہ ریسرچ کے مطابق بالچر ایک Autoimmune disorder ہے، جِس میں جسم اپنے ہی خلاف متحرک ہو کر بال پیدا کرنے والے Hair Follicles پر حملہ آور ہوتا ہے اور بالوں کو گِرانے کا باعث بنتا ہے۔

جہاں تک ہمارے ماحول میں پائے جانے والے عوامل کا تعلق ہے، نفسیاتی دباؤ (Psychological stress) کو بالچر کے ہونے کی وجہ کے طور پر جانا جاتا ہے۔ میرے مشاھدہ میں یہ بات آئ ھے کہ جب بھی بالچر کے مریضوں سے ذھنی دباؤ کے بارے میں دریافت کیا جائے، زیادہ تر لوگ اس بات کی تصدیق کرتے ھیں کہ وہ ذھنی دباؤ کا شکار ھیں۔ کچھ لوگ ذھنی دباؤ یا stress کیلیئے " ٹینشن " کا لفظ استعمال کرتے ھیں۔

علامات

بالچر (Alopecia areata) کا آغاز بالوں والی جِلد کے کِسی ایک حصے سے بالوں کے جَھڑنے سے ہوتا ہے۔ جہاں سے بال گرتے ہیں، اُس کے آس پاس کے بالوں کو ذرا سا بھی کھینچیں تو بآسانی بال نِکل آتے ہیں۔ کچھ مریضوں میں اسکے کچھ مہینے بعد متاثرہ جگہ خود بخود بال واپس نِکل آتے ہیں، جبکہ کچھ مریضوں میں جِلد کی مزید جگہیں متاثر ہونے لگتی ہیں۔ کچھ مریضوں میں سارے سر کے بال گِر جاتے ہیں، جبکہ کچھ میں پورے جسم کے بال ختم ہو جاتے ہیں۔

جِلد کے وہ مقام جہاں خودبخود بال واپس آنے لگتے ہیں، وہاں بال پَتلے اور بَغیر رَنگ کے ہو سکتے ہیں۔ تاہم وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ بال اپنا عمومی رنگ اور شکل واپس اختیار کر لیتے ہیں۔ ایسا بھی ممکن ہے کہ جِلد کے ایک حصے پر بال واپس آ رہے ہوں اور دوسرے حصے سے گرتے جا رہے ہوں۔ ایک دلچسب بات یہ ہے کہ بالچر (Balchar) عموماً سفید بالوں پر اثرانداز نہیں ہوتا، تاہم یہ لازمی نہیں ہے۔ اِسی طرح جب بال خودبخود واپس اُگتے ہیں تو اُن کا رنگ دوسرے بالوں جیسا نہیں ہوتا؛ کچھ لوگوں میں سفید بھی ہو سکتا ہے۔

چُونکہ بالچر Hair Follicles کو تباہ نہیں کرتی، اس لیئے بالوں کے دوبارہ اُگنے کے امکانات عمر بھر باقی رہتے ہیں۔ تقریباً 80 فیصد مریضوں میں ایک سال کے عرصے میں خودبخود بہتری آنے لگتی ہے، تاہم بالچر اِنتہائ غیرمتوقع انداز میں اپنا اثر دکھاتی ہے اور اِس بارے میں وثوق سے کوئ بات نہیں کہی جا سکتی۔

علاج (Balchar ka ilaj)

پاکستان میں بالچر کے علاج کے اُتنے ہی ٹوٹکے موجود ہیں، جتنی پاکستان کی آبادی ہے۔ ایک نہایت عام طور پر استعمال ہونے والا ٹوٹکا لہسن کے پانی کا جِلد کی متاثرہ جگہ پر استعمال ہے۔ چونکہ اِس بیماری کی نوعیت ایسی ہے کہ کچھ لوگوں میں کچھ عرصہ بعد خودبخود بال نکلنے لگتے ہیں، اِس لیئے ہر ٹوٹکے کو استعمال کرنے والا یہی سمجھتا ہے کہ اُس کا ٹوٹکہ کارآمد ہے جِس سے بال واپس نِکل آئے ہیں۔

جہاں تک میڈیکل سائنس کا تعلق ہے، کچھ ادویات ایسی موجود ہیں جِن کے استعمال سے بال دوبارہ نکلنے لگتے ہیں، تاہم جِن مریضوں کے بہت زیادہ بال گِر چکے ہوں، اُن میں ادویات زیادہ اثر نہیں دکھاتیں۔ اِس کے علاوہ بہت سے مریض وِگ کا اِستعمال کرتے ہیں۔

جو ادویات بالچر کے علاج (Balchar ka ilaj) کیلیئے کارآمد ہیں اُن کو جِلد پر کریم، لوشن یا ٹیکہ کی شکل میں لگایا جاتا ہے۔ اِن کے استعمال سے بال کچھ ہی دنوں میں دوبارہ نکلنے لگتے ہیں۔ کچھ معالج کھانے کی ادویات بھی استعمال کرواتے ہیں۔

باہر کے ممالک میں آن لائن کمیونیٹیز بنائ گئی ہیں جہاں بالچر (Alopecia areata) سے متاثرہ افراد اپنے مسائل کے بارے میں اپنے جیسے دوسرے لوگوں سے بات چیت کرسکتے ہیں۔ اِن میں سے کچھ کے لِنک نیچے دیئے گئے ہیں۔

World Alopecia Community, Inc.

National Alopecia Areata Foundation.

یہ تحریر مفادِعامہ کیلیئے تیار کی گئی ہے۔ آپ اسے مصنف اور ویب سائیٹ کے نام سمیت اپنے احباب کیساتھ شیئر کر سکتے ہیں۔

جُملہ حقوق محفوظ ہیں۔


Skype

Clicking Subscribe button will subscribe you to our marketing campaigns as well.