Advertisement

Food Poisoning in Urdu فوڈ پوائزننگ کیا ھے؟


Introduction to Food Poisoning in Urdu

پاکستان میں فوڈ پوائزننگ (Food Poisoning) عام ھے اور گرمیوں میں، خصوصاً برسات کے دنوں میں یہ وبا کی صورت میں پھوٹ پڑتی ھے۔ چنانچہ اس سے بچاؤ کیلیئے معلومات کا ھونا نہایت ضروری ھے۔ یہ تحریر مفادِ عامہ کیلیئے شائع کی جا رھی ھے۔ اِسے شیئر کر کے اپنے آس پاس رھنے والے لوگوں کو فوڈ پوائزننگ کے بارے میں آگاہ کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔

فوڈ پوائزننگ (food poisoning) مُختلف اقسام کے جراثیموں سے آلودہ خوراک کھانے سے لاحق ھونے والی بیماری کو کہا جاتا ھے۔ عام طور پر گیسٹرو (Gastro) کا لفظ بھی اسی بیماری کیلیئے استعمال کیا جاتا ھے۔ یہ کیفیت عام طور پر مُہلک نہیں ھوتی لیکن کچھ اقسام کے جراثیم خطرناک ثابت ھو سکتے ھیں۔ چونکہ فوڈ پوائزننگ مُختلف اقسام کے جراثیموں کی وجہ سے لاحق ھو سکتی ھے، اس لیئے کھانا کھانے اور علامات کے ظاھر ھونے کے درمیان وقت کا دورانیہ بھی مختلف ھوتا ھے۔ کچھ جراثیم ایک گھنٹے کے اندر اندر بیماری کی کیفیت پیدا کر دیتے ھیں، جبکہ کچھ جراثیم ھفتوں بعد اپنا اثر دکھاتے ھیں۔ فوڈ پوائزننگ کی وجہ بننے والے جراثیموں کی 250 سے زیادہ اقسام موجود ھیں۔

کھانے کی تیاری کے کسی بھی مرحلے پر جراثیم خود یا اُن سے خارج ھونے والے زھریلے مادے کھانے کو آلودہ کر سکتےھیں۔ جراثیموں کے پھیلاؤ کی سب سے عام وجہ cross-contamination ھے۔ اس سے مراد بیماری پھیلانے والے جراثیموں کا ایک سطح سے دوسری سطح پر منتقل ھونا ھے۔ ایسا عموماً اُس وقت ھوتا ھے جب تیار کیئے جانے والے کھانے کو آگ پر پکایا نہ جائے۔ مثلاً کھانے کے ساتھ دیئے جانے والے سلاد کے پتے۔ چونکہ اِن پتوں کو آگ پر پکایا نہیں جاتا، اس لیئے اِن پَتوں پر لگنے والے گندے ھاتھوں سے جراثیم پھیلتے جاتے ھیں۔ جو شخص انہیں کھا لے، اس تک جراثیم آسانی سے پہنچ جاتے ھیں۔

Symptoms of Food Poisoning in Urdu

فوڈ پوائزننگ کی علامات

مُختلف جراثیموں سے ھونے والی فوڈ پوائزننگ کی علامات مُختلف ھو سکتی ھیں لیکن مندرجہ ذیل علامات عام طور پر دیکھی جا سکتی ھیں:

- متلی ھونا

- اُلٹی ھونا

- پیٹ درد

- پیٹ میں مروڑ پڑنا

- بخار ھونا

- پیچش (پانی یا خون والے)


Consult your doctor if you have the following symptoms (in Urdu Language)

اگر مندرجہ ذیل علامات ھوں، تو فوراً اپنے معالج سے رجوع کریں:

- 2 دن سے زیادہ پیچش رھنا

- اُلٹی یا پاخانہ میں خون کا اخراج

- شدید پیٹ درد یا پیٹ میں مروڑ

- تھرمامیٹر منہ میں رکھنے پر درجئہ حرارت 38.6 ڈگری سینٹی گریڈ سے زیادہ

- اُلٹی بغیر رُکے بار بار آنا

- جسم میں پانی کی کمی کی علامات (سخت پیاس، پیشاب کم یا بالکل نہ آنا، شدید کمزوری محسوس کرنا، سر چکرانا، منہ خُشک ھونا)

- نظر دُھندلانا

- پٹھوں میں کمزوری محسوس کرنا

Diagnosis of Food Poisoning in Urdu

فوڈ پوائزننگ کی تشخیص

عام طور پر آپ کا معالج علامات دیکھ کر ھی بتا سکتا ھے کہ آپ کو فوڈ پوائزننگ ھوئ ھے۔ لیکن اگر مرض تشخیص کرنے میں مشکل ھو، تو مندرجہ ذیل ٹیسٹ مدد فراحم کر سکتے ھیں:

Blood Test

خون کے مختلف ٹیسٹوں کے ذریعے آپ کا معالج یہ پتہ چلا سکتا ھے کہ کہیں بیماری کے جراثیم خون تک تو نہیں پہنچ گئے۔ اسی طرح اگر خون میں Hepatitis A یا Listeria بیکٹیریا موجود ھو تو بھی ٹیسٹ کے ذریعے پتہ چلایا جا سکتا ھے۔ بعض دوسرے جراثیموں کیلیئے بھی ٹیسٹ کروائے جا سکتے ھیں۔ اسی طرح دوسرے ٹیسٹوں کے ذریعے یہ بھی پتہ چلایا جا سکتا ھے کہ آپ کے جسم میں نمکیات (Electrolytes) کی کمی یا زیادتی تو نہیں۔

Stool Culture

یہ عام طور پر اُن مریضوں میں کروایا جاتا ھے جن کے پیٹ میں شدید درد کے ساتھ ساتھ بخار کی کیفیت ھو۔ اگر آپ کی فوڈ پوائزننگ کی کیفیت لمبے عرصے تک چلتی رھے، تو بھی آپ کا معالج یہ ٹیسٹ کروا سکتا ھے۔ آپ کے پاخانہ کے ٹیسٹ سے یہ پتہ چلایا جا سکتا ھے کہ آپ کی فوڈ پوائزننگ کی کیفیت کس قسم کے جراثیم کی وجہ سے ھے اور یہ کہ اُس جراثیم کے خلاف کون سی دوا مؤثر ھے۔ اسی طرح مائیکروسکوپ کے ذریعے پاخانہ کے معائنہ سے اس میں موجود طفیلی جانداروں (Parasites)کے انڈوں کی موجودگی کا بھی پتہ چل جاتا ھے۔ لیکن اِس ٹیسٹ کا نتیجہ آنے میں کچھ دن لگ سکتے ھیں۔

Food poisoning can be dangerous for the following people

فوڈ پوائزننگ کِن لوگوں کیلیئے خطرناک ثابت ھو سکتی ھے؟

- حاملہ خوتین

اِن میں فوڈ پوائزننگ زیادہ خطرناک ثابت ھو سکتی ھے۔ بعض کیفیات میں تو یہ بچے کو بھی نشانہ بنا سکتی ھے۔

- بڑی عمر کے افراد

چونکہ بڑی عمر کے افراد کی قوتِ مدافعت کمزور ھوتی ھے، اس لیئے اُن میں فوڈ پوائزننگ کا وار خطرناک ھو سکتا ھے۔

- چھوٹے بچے

چونکہ نوزائیدہ اور چھوٹی عمر کے بچوں کا دفاعی نظام مکمل طور پر فعال نہیں ھوتا، اس لیئے فوڈ پوائزننگ اِن کو زیادہ متاثر کر سکتی ھے۔

- پرانی بیماریوں کے ساتھ زندگی گزارنے والے افراد

ایسے مریض جن کو عرصہ دراز سے کوئ مرض لاحق ھو، اُن کا دفاعی نظام کمزور ھو جاتا ھے۔ مثلاً شوگر کے مریض، جگر کے مریض یا کینسر کے مریض وغیرہ۔ ایسے افراد کو فوڈ پوائزننگ زیادہ متاثر کر سکتی ھے۔

How to protect yourself from food poisoning? (in Urdu)

فوڈ پوائزننگ سے بچاؤ

- سب سے پہلے اور سب سے ضروری چیز یہ ھے کہ کھانے اور پینے کیلیئے استعمال ھونے والے پانی کو لازمی ابال کر استعمال کریں۔ جب پانی ابلتے وقت کھولنے لگے تو اُسے کچھ دیر آگ پر رھنے دیں، اُس کے بعد آگ کو بند کریں۔ ایسا کرنے سے زیادہ تر جراثیم تلف ھو جائیں گے۔ اُبلا ھوا پانی جب ٹھنڈا ھو جائے تو اسے استعمال میں لائیں۔

- جب آپ سفر پر ھوں تو پینے والے پانی کے بارے میں بہت محتاط رھیں۔ بہتر یہی ھے کہ اپنے استعمال کا پانی اپنے ساتھ لے کر جائیں۔

- اپنے ھاتھ، کھانے کے برتن اور جس جگہ یا سطح پر کھانا تیار کیا جاتا ھو، اُسے بار بار صاف کریں۔ صابن کا استعمال کریں۔ چاھے سطح صاف ھی کیوں نہ لگے، اُس پر کام شروع کرنے سے پہلے اُسے پانی سے دھو لیں یا گیلے کپڑے سے صاف کر کے خشک کر لیں۔ جن برتنوں کو ابالا جا سکتا ھو، صفائ سے متعلق شک کی صورت میں اُنہیں ابال لیں۔

- وہ خوراک جو کھانے کیلیئے بالکل تیار ھو، اُسے اُس خوراک سے دُور رکھیں جو ابھی خام حالت میں موجود ھو۔ جب خریداری کرنے جائیں، تب بھی کچے گوشت اور سبزی کے پتوں وغیرہ کو کھانے کی دوسری اشیاء سے دور رکھیں۔ اس سے cross-contamination نہیں ھو گی اور آپ محفوظ رھیں گے۔

- کھانا پکانے کے دوران کھانے والا تھرمامیٹر (cooking thermometer) استعمال کرنا بہت بہتر ھے۔ اس سے آپ کو یہ پتہ چل جاتا ھے کہ آپ نے کھانے کو کتنے درجہ حرارت پر پکایا ھے۔ زیادہ تر جراثیموں کو بلند درجہ حرارت پر پکا کر ختم کیا جا سکتا ھے۔ اگر کھانے کا درجہ حرارت 80 ڈگری تک پہنچ جائے تو زیادہ تر جراثیم تلف ھو جاتے ھیں۔

- ایسی خوراک جو جلدی خراب ھو جاتی ھے، اُسے خریداری کے فوراً بعد محفوظ کریں۔ دودھ اور گوشت کو تو فوراً فریزر میں رکھ دینا بہتر ھے۔

- عام طور پر فریزر سے نکالنے کے بعد خوراک کو پگھلانے کیلیئے کمرے کے درجہ حرارت پر رکھ دیا جاتا ھے۔ ایسا کرنا مناسب نہیں ھے۔ پگھلانے کا عمل فریج میں رکھ کر کیا جائے تو زیادہ محفوظ ھوتا ھے۔ اگر مائیکرو ویو اوون (Microwave oven) کے ذریعے ڈی فراسٹ (Defrost) کریں، تو پھر فوراً پکا لیں۔

- ایسا کوئ بھی کھانا جس کے متعلق شک ھو کہ وہ خراب ھو چکا ھے، اس سے فوراً نجات حاصل کریں۔ جو خوراک زیادہ دیر کیلیئے گرمی میں پڑی رہ جائے اور وہ خراب ھونے والی ھو، اُسے کھانے کیلیئے استعمال مت کریں۔

- ایسی خوراک جو کم پکائ گئی (under-cooked) ھو، اسے حاملہ خواتین، بچے، بوڑھے اور دیرینہ بیمار لوگ نہ کھائیں تو بہتر ھے۔


Skype

Clicking Subscribe button will subscribe you to our marketing campaigns as well.